Success and failure depend on luck or man's hard work and ability. Apart from religion.

    اردو میں پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں
 


Success and failure depend on luck or man's hard work and ability. 

Allama Muhammad Iqbal (may Allah have mercy on him) had said this a long time ago
I don't know what is the name of his deception or self-deception
The excuse of destiny by making Muslims free from action -------------------------

Action makes life both heaven and hell
This khaki is neither light nor feminine in its nature.

Raise yourself so high that before every destiny
Ask God Himself to tell you what is your pleasure

First of all, the term success and failure also needs to be understood.
For example ... The two brothers grow up in the same home, environment, training and facilities.
Both step into practical life by reading and writing.
One brother earns Rs 500,000 a month from business or job, the other Rs 100,000 a month.
Now compared to the two brothers, we will say that the one who earns five lakhs is successful.
But the one who is earning one lakh is also more successful than crores.
So ... We must first set the standard for success and failure.
after this... The reasons can be seen.
Luck may be involved in the process to some extent.
But ... ۔
According to my own personal experience ...
Hard work, honesty, dedication and perseverance are the key to success
Not only sound education but his alertness and dedication too are most required. Otherwise, no one works harder than our workers. That is, hard work also has time, place and opportunity.
In spite of all these things, I have seen destiny reign in the neighborhoods.


کامیابی اور ناکامی کا انحصار قسمت پر ھے یا انسان کی محنت قابلیت اور کوشش پر منحصر ھے۔مذہب سے ہٹ کر

علامہ محمد اقبال رحمتہ اللہ علیہ نے تو بہت پہلے یہ بات کہا تھا
خبر نہیں ہے کیا ہے نام اس کا خدا فریبی کہ خود فریبی
عمل سے فارغ ہوا مسلماں بنا کر تقدیر کا بہانہ -------------------------

عمل سے زندگی بنتی ہے جنت بھی جہنم بھی
یہ خاکی اپنی فطرت میں نہ نوری ہے نہ ناری -----------------------

خودی کو کر بلند اتنا کہ ہر تقدیر سے پہلے
خدا بندے سے خود پوچھے بتا تیری رضا کیا ہے

سب سے پہلے تو کامیابی اور ناکامی کی اصطلاح کو بھی سمجھنے کی ضرورت ھے۔
مثلاً۔۔۔۔ دو بھائی ایک ھی گھر، ماحول، تربیت اور سہولیات میں پروان چڑھتے ھیں۔
دونوں پڑھ لکھ کر عملی زندگی میں قدم رکھتے ھیں۔
ایک بھائی کاروبار یا نوکری سے 5 لاکھ مہینہ کماتا ھے، دوسرا 1 لاکھ مہینہ۔

اب دونوں بھائیوں کے مقابلے میں ھم یہی کہیں گے کہ جو پانچ لاکھ کماتا ھے وہ کامیاب ھے۔۔۔
مگر جو ایک لاکھ کما رھا ھے وہ بھی کروڑوں سے زیادہ کامیاب ھے۔
سو۔۔۔۔ سب سے پہلے ھمیں کامیابی اور ناکامی کا معیار طے کرنا ھوگا۔
اس کے بعد۔۔۔ وجوہات کو دیکھا جا سکتا ھے۔

قسمت یا نصیب کا شائید کسی حد تک کامیابی میں عمل دخل ھو۔۔۔۔
مگر۔۔۔۔ ۔
میرے اپنے زاتی تجربے کے مطابق۔۔
محنت، ایمانداری، لگن اور مستقل مزاجی کامیابی کی ضمانت ھیں

صرف سخت محنت سے نہیں بلکہ صحیح وقت پر صحیح سمت میں کیے گئے صحیح فیصلے بھی اتنے ہی بنیادی اہمیت کے حامل ہیں جتنا کہ سخت محنت۔ ورنہ ہمارے مزدور سے زیادہ محنت کوئی نہیں کرتا۔ یعنی سخت محنت کا بھی وقت، مقام اور موقع ہوتا ہے۔
ان تمام امور کے باوجود میں نے قسمت کو ہی محلوں میں راج کرتے دیکھا ہے.

0/Post a Comment/Comments